مزید بوریت

جی ہاں۔۔۔ تک بند شاعر پھر حاضر خدمت ہے۔۔۔ ملاحظہ فرمائیں اور بور ہوکر شکریہ کا موقع دیں۔۔

صحرا ہے، پیاس ہے اور میں ہوں
دھیرے دھیرے بجھتی آس ہے اور میں ہوں

بے منزل رستوں کا سفر ہے زندگی
رائیگانی کا احساس ہے اور میں ہوں

جانے کیا خطا کی تھی جو یہ سزا پائی
عمر بھر کا بن باس ہے اور میں ہوں

اس بیوپار میں سود بھی زیاں ہے
غمِ ہجر کی راس ہے اور میں‌ ہوں

یہ اندوہِ وفا ہے کہ نارسائی ہے
پارسائی کا قیاس ہے اور میں ہوں

Comments
9 Comments

9 تبصرے:

کا مران کا می نے فرمایا ہے۔۔۔

سرکار شاعر صاحب نیچے مشکل الفاظ کے معنی بھی لکھ دیا کریں :?:
مولا خوش رکھے :grin:
اگر آپ ایک سال اور یو اے ای میں رہے تو پکے پکروڑ شاعر بن جائیں گے اور نام ہو گا جعفر درد المعروف درد اے رقیباں والے ۔

تانیہ رحمان نے فرمایا ہے۔۔۔

یہ جعفر کی شاعری نہیں ہے ۔ آپ یہ سوچنے لگے کہ اتنی اچھی شاعری اور جعفر

کامران اصغر کامی نے فرمایا ہے۔۔۔

اچھا آپ اپنا ایک شعر ہی سنا دیں تو مانو

جعفر نے فرمایا ہے۔۔۔

::کامی:: مشکل الفاظ کی وضاحت کی جائے۔۔۔۔ :!: :!:
پکا تو کیا کچا شاعر بھی نہیں بن سکتا۔۔۔ :grin:
::تانیہ:: اوہو۔۔۔ آپ نے تو مجھے مخاطب ہی نہیں‌ کیا۔۔۔ لیکن پھر بھی شک کرنے کا شکریہ۔۔۔ :grin:

بلوُ نے فرمایا ہے۔۔۔

واہ واہ واہ جعفر صاحب ایک بار پھر بور کرنے کا شکریہ

عمر احمد بنگش نے فرمایا ہے۔۔۔

ابھی کے ابھی ڈفر جی کے بلاگ پر تبصرہ پڑھ کر آ رہا ہوں، خیر کوئی بات نہیں، یہ کھانا پکانا اور کپڑے دھونا، ایسا ہی ہوتا ہے۔۔۔۔۔ بندہ ہوش کھو بیٹھتا ہے اور شاعر جنم لیتا ہے۔ غم جاناں‌تو پتہ نہیں۔۔ غم دوراں‌سے تو ہر شاعر گذرتا ہی ہے۔۔۔ جیسے کہ آپ :mrgreen:

جعفر نے فرمایا ہے۔۔۔

::بلو:: واہ واہ۔۔۔ایک بار پھر بور ہونے کا شکریہ
::عمر::‌ تو شاعر بننے کے لئے ہوش کھونا پڑتے ہیں۔۔۔۔ :shock:
غم جاناں بھی کوئی ایک تو نہیں۔۔۔ دل چاہتا ہے کہ ہر حسیں چہرے کو جاناں بنالیں۔۔۔ :wink:
لیکن آج کل کی جاناں بھی چالاک ہوگئی ہیں۔۔۔ گاڑی، بنک بیلنس کے بغیر صرف شاعری پر کوئی جاناں نہیں‌مانتی۔۔۔ :mrgreen:

مسعود قاضی ڈلس ٹیکداس نے فرمایا ہے۔۔۔

گزاری عمر تدبیرون میں الجھے
رھے سب خواب تعبیروں میں الجھے
وہ کیا پہنائے گا زنجیر مجھہ کو
کھڑا ھے خود جو زنجیروں میں الجھے
مسعود قاضی ڈلس ٹیکساس

جعفر نے فرمایا ہے۔۔۔

::مسعود قاضی:: واہ۔۔۔ عمدہ ہے۔۔۔

تبصرہ کیجیے