زوجہ، کاکروچ اور چھپکلی

آپ عورتوں کو دیکھ لیں۔ یہ ضروری ہوتی ہیں۔ یہ اگر نکاح میں نہ ہوں تو ہر وقت اچھی لگتی ہیں۔ یہ نکاح میں آجائیں تو ہفتے میں ایک دو دن  ہی اچھی لگتی ہیں۔  ان کی باتیں ماننی پڑتی ہیں۔ ورنہ یہ آپ کی "بات" نہیں مانتیں۔ جس سے المیے جنم لیتے ہیں۔ لہذا میں جب بھی اپنی بیوی کی بات کو اگنور کرنے کا سوچتا ہوں۔ اس کو ایک کان سے سن کر دوسرے کان سے نکالنے کا ارادہ کرتا ہوں۔ میرے سامنے ویک اینڈ نائٹ آجاتی ہے۔ میں ڈر جاتا ہوں۔ میری گھگھّی بندھ جاتی ہے۔ میں اچھا بچہ بن کے فورا ایسے فاسد خیالات سے جان چھڑ ا لیتا ہوں۔ اور جیسا مجھے کرنے کا حکم دیا جاتا ہے  بعینہ ویسا کرنےکی کوشش کرتا ہوں۔
یہ پرسوں کی بات ہے۔ ناشتے کی میز پر ہماری زوجہ نے ہمیں حکم دیا کہ ایک ہفتے کے اندر اندر اگر کاکروچ اور چھپکلیوں کے مسئلے کا حل نہ نکلا تو تو سوچ لو کہ اس ہفتے میں دو  چھٹیاں ہیں۔ خوف سے میرے رونگٹے کھڑے ہوگئے۔ میری شوگر لو ہوگئی۔ میں نے پلیٹ سے ایک سلائس اٹھایا اس پر مکھن لگایا۔ اس کی ایک بائٹ لی۔ چائے کا ایک گھونٹ بھرا اور مسکرا کر اپنی بیوی کی طرف دیکھا اور کہا۔ کہ آپ فکر نہ کریں ، ڈونٹ وری۔ آئی ول سارٹ دس آوٹ۔ میں آفس پہنچا میں نے اپنی ساری ریسرچ ٹیم کو اس مسئلے کے حل پر لگا دیا۔ میں نے سارے کام چھوڑدئیے۔ یہ کام تو پھر بھی ہوسکتے ہیں لیکن دو  چھٹیاں ضائع ہوگئیں تو گگومنڈی کے حکیم صاحب کی دوائی ضائع چلی جائے گی۔ اس کا کوئی فائدہ نہیں رہے گا۔ دنیا اندھیر ہوجائے گی اور من بے کل ۔  ہم سارا دن کام کرتے رہے۔ ہم نے رات بارہ بجے تک اس پرابلم کو سولو کرنے کی کوشش جاری رکھی اور بالآخر ایسے حل ڈھونڈ نکالے جو کاکروچ اور چھپکلیوں کا مسئلہ ہمیشہ کے لیے حل کردیں گے۔
آپ کاکروچز کو دیکھ لیں۔ یہ بہت سخت جان ہوتے ہیں۔ یہ بہت سارے ہوتے ہیں۔ ان کے رہن سہن کی تھورو سٹڈی کی جائے تو پتہ چلتا ہے کہ ان میں ڈیموکریسی ہوتی ہے۔ یہ اپنا لیڈر، الیکشن کے ذریعے چنتے ہیں۔ اگر ہم ان کے الیکشن کمیشن پر ڈاوٹ پیدا کردیں اگر ہم ان کو باور کرادیں کہ الیکشن میں رگنگ ہوئی ہے۔ جو کاکروچ پارٹی ہاری ہے وہ اصل میں جیت رہی تھی اور اسے بے ایمانی اور رگنگ سے ہرایا گیا ہے  تو اس سے کاکروچز میں انارکی پیدا ہوگی۔ وہ ایک دوسرے سے لڑیں گے۔ ایک دوسرے کو ماریں گے۔ ایک پارٹی کے کاکروچ مارے جائیں گے تو دوسری پارٹی ریوینج لے گی اور اس طرح چین ری ایکشن شروع ہوجائےگا۔ اس طرح آہستہ آہستہ سارے کاکروچز ایک دوسرے کو ماردیں گے اور آپ کا گھر کاکروچ فری ہوجائے گا۔ آپ کی بیوی آپ سے ہیپی ہوجائے گی۔ آپ کی ویک اینڈ نائٹ سہانی ہوجائے گی۔ آپ زندگی کو انجائے کرسکیں گے۔ آپ اتوار کی صبح فریش اٹھیں گے۔
چھپکلیوں کا مسئلہ زیادہ کرانک ہے۔ یہ ڈیموکریسی پر یقین نہیں رکھتیں۔ یہ جنگل کے قانون پر یقین رکھتی ہیں۔ یہ اپنا شکار خو د ہنٹ کرتی ہیں۔ اور اکیلا رہنا پسند کرتی ہیں۔ ہم نے بہت  غور و فکر کیا۔ اس غور و فکرمیں تین لارج سائز پیزے اور ڈیو کی چھ دو لیٹر والی بوتلیں لگ گئیں۔ سگریٹ کے دو ڈنڈے بھی اس غور و فکر میں خرچ ہوئے۔ بالآخر ہم ان کی کمزوری ڈھونڈنے میں کامیاب ہوگئے۔ ہمارِی سٹڈی نے شو کیا کہ چھپکلے بہت جیلس اور شکی  ہوتے ہیں۔ یہ اپنی گر ل فرینڈ چھپکلی پر ہر وقت  کڑی نظر رکھتے ہیں۔ اگر ان کے دل میں شک پیدا کردیا جائے کہ دوسرے کمرے والا چھپکلا ، آپکی چھپکلی پر بری نظر رکھتا ہے۔ یہ اس کو پٹانا چاہتا ہے، یہ اس کو ڈیٹ پر لے جانا چاہتا ہے۔ تو وہ چھپکلا غصے میں آجائے گا وہ اینگری ینگ چھپکلا بن جائے گا ۔ وہ دوسرے کمرے والے چھپکلے کو دھوکے سے مار دے گا۔ اس پر ڈیسیزڈ چھپکلے کی گرل فرینڈ اس کا انتقام لینے کے لیے باتھ روم والے چھپکلے سے سیٹ ہوجائے گی اور وہ بیڈ روم والے چھپکلے کو ماردے گا۔ یہ بھی چین ری ایکشن ہوگا اور چند ہی دونوں میں چھپکلیوں سے بھی چھٹکارا مل جائے گا۔ آپ کی لائف ، بیوٹی فل اور وائف کوآپریٹو ہوجائے گی۔  آپ کی ویک اینڈ نائٹس گلیمرس  اور ڈیلیشئس ہوجائیں گی۔
ہر مسئلے کا حل بہت آسان ہوتا ہے۔ جیسے ہم نے کاکروچز اور چھپکلیوں کا مسئلہ حل کیا ہے۔ عنقریب ہم دنیا کے باقی مسئلے بھی ایسے حل کرکے تاریخ میں اپنا نام گلابی حروف سے لکھوالیں گے۔



Comments
4 Comments

4 تبصرے:

افتخار اجمل بھوپال نے فرمایا ہے۔۔۔

میں بڑے انہماک سے پڑھ رہا تھا کہ آ گیا مجرب نسخہ ہاتھ میں ۔ جناب ۔ آپ کا علاقہ کم ترقی یافتہ ہے اسلئے ابھی وہاں لال بیگ عربی میں صُرصار انگریزی میں کاکروچ ابھی جمہوریت پسند ہیں اور چھپکلے بنیاد پرست ۔ میں اسلام آباد میں ہوں جہاں روش خیالی عام ہے ۔ لال بیگ ۔ چھپکلے ہی نہیں مکھیاں اور مچھر بھی ماڈرن ہو چکے ہیں اور جدید سائنس کا بھی بخوبی علم رکھتے ہیں ۔ لال بیگ مارنے کیلئے میں دو ڈبے بائی گون سیور لائین میں ختم کر دیتا ہوں تو سرحد پار سے سی آئی اے مزید ایجنٹ خفیہ راستوں سے بھجوا دیتی ہے ۔ ماڈرن چھپلیاں اور چھپکلے بھی آزادی سے الگ الگ گھومتے ہیں ۔ ان پر بھی نسخے آزما کر تھک چکا ہوں

ساجد نے فرمایا ہے۔۔۔

ویک اینڈ پر بیویاں بات نہ مانیں تو المئے جنم لیتے ہیں اور مان لیں تو کون سے نیوٹن جنم لیتے ہیں ؟

منیر عباسی نے فرمایا ہے۔۔۔

استاد!!،

اب تک صرف دو تبصرے؟؟ میرے تبصرے کے علاوہ۔ یہ دن بھی آنے تھے؟

Rai Muhammad Azlan Shahid نے فرمایا ہے۔۔۔

استاد کا بلاگ ٹویٹر کے ہاتھوں ہلاک ہو را

تبصرہ کیجیے